ہر چیز سے عیاں ہے،ہرشے میں نہاں ہےِ،خالقِ کائنات مالکِ کائنات
عقلِ کل،توانائی کل،ہمہ جہت ہمہ صفت،خالقِ کائنات مالکِ کائنات
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
یہ آنکھیں کہ جنِ سے میں دیکھتا ہوں ،میری نہیں،عطائے خُدا وندی ہے
یہ پاؤں کہ جنِ سے میں چلتا ہوں، میرے نہیں،عطائے خُدا وندی ہے
غرض کہ میرے وجود کا، ذرہ ذرہ میرا نہیں،عطائے خُدا وندی ہے
میرے خالق،میرے مالک،میرے پروردِگار،اِن نعمتوں کا:بے انتہاشُکریہ

ـــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ

Wednesday, July 6, 2016

َِِِ" عیِد مُبارک "

 "۔۔۔۔اگرچہ یہ  سچ ہےکہ  عالمی واقعات نے اِنسان کے دل  کو  کرِچی کرِچی کر دِیا ہے،،،پھربھی "
عزیز  قارئین،بلاگرساتھی،سیارہانتظامیہ،اور مسلم اُمہ کو
  منِجانب  فکرستان

Paper Flower Bouquet
   ( ایم  ڈی۔نور )

Tuesday, June 7, 2016

۔92 سال جینے کیلئے !!۔

منجانب  فکرستان
 مرنے کی دعائیں کیوں مانگوں جینے کی تمنا کون کرے، یہ دنیا ہویا وہ دنیا اب خواہش دنیا کون کرے۔
 لیکن جبلی تقاضا تو یہ ہےکہ جان کو کئی طرح کے روگ کیوں نہ لگے ہوں،پھر بھی خواہشِ دنیا کم نہیں ہوتی، ہر مرنے والا مزید  زندگی چاہتا  ہے۔۔تاہم مزید زندگی چاہنے  کے بھی کچھ دُکھ ہوتے ہیں،مثلاً  گلوکاری میں تقدس جیسا مقام حاصل کرنے والی لتا منگیشکر کو" نام نہاد گلوکارہ" کہے جانے کا دُکھ سِہنا  پڑا۔۔اِس ڈھلتی  عُمر میں، تمنے بھٹ جیسے لوگوں  کے  ریمارک تو  روح کوبھی دُکھی کر ڈالتے ہیں۔۔
 امریکی مصنف  Dan Buettner  کا دُکھ  یہ کہ سُپرقوم ہو  نے کے باوجود  اوسطاً سے 13سال پہلےمر جاتے ہیں۔  امریکا میں اوسط عمر 79 سال ہے،اُن کے حساب سے امریکیوں کواوسطاً 92 سال تک زندہ رہنا چاہیے، امریکیوں کی اوسط کو 92 سالہ بنانے  کیلئے  اُنہوں نے تحقیق بھی کی اور کتاب بھی لکھی ۔۔۔جسکی تفصیل کیلئے درج ذیل لنک ایڈریس پر  ۔۔۔۔
http://www.odditycentral.com/travel/ikaria-the-greek-island-of-longevity.html
نوٹ: پوسٹ میں   کہی  گئی باتوں سے اتفاق /اختلاف  کرنا  آپ کا  حق  ہے ۔۔
اب  مُجھے  اجازت  دیں۔
{ہمیشہ  رب  کی  مہربانیاں  رہیں}

Sunday, May 22, 2016

مرتے سمے ۔۔

غوروفکر  کیلئے !! منجانب فکرستان  
آپ کتنے فیصد؟ اِنسانی صفات کے حامل  ہیں۔۔   
یہ فیصلہ تواُس محتسب  کے ہاتھ میں ہے، جسے اِنسانی ضمیر کہتے  ہیں،اور جو لوگ  اعلیٰ  ضمیر  ہوتے ہیں وہ  اپنی تو کیا، اپنے کسی ساتھی یا دوست کی  جانب  سے  کسی  کمیونٹی کے خلاف  نا مناسب تبصرہ ہونے پر  خود اپنے  ضمیر پر بوجھ محسوس کرتے ہیں اور  اُنہیں  مرتے سمے بھی ضمیر کی خلش  محسوس ہوتی ہے،جب تک  معافی نہ  مانگ لیں سکون سے مر بھی نہیں سکتے ۔۔اِسکی تازہ  مثال امریکی سینیٹر باب بینئٹ ( Senator Bob Bennett)  کی  ہے۔۔
بسترِ مرگ پر پڑے ریپبلکن سینیٹر باب بینئٹ نے اپنی موت سے چند گھنٹے پیشتر اپنے عزیزوں سے کہا کہ اس ہسپتال میں اگر کوئی مسلمان ہے تو اُس سے  میری  بات کرائو، جس پر  ہسپتال میں موجود ایک مسلمان خاتون اُنکی مُلاقات کرائی گئی تو اُنہوں نے  خاتون  سے اپنی پارٹی کےریپبلکن  صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کے مسلمانوں کے خلاف دیئے گئے بیانات پر معافی  چاہی۔۔۔
 اور  دُنیا سے کُوچ   کر گئے ۔۔۔ذرہ  ہو کہ آفتاب،سب کا  مُقدر کوُچ کرنا ہے۔۔
مکمل آگاہی  کیلئے لنک پر جائیں۔۔۔۔ میری  رائے ہے کہ لنک پر ضرور جائیں۔۔  
http://www.nbcnews.com/politics/2016-election/gop-senator-bob-bennett-apologized-muslims-trump-while-deathbed-n576566
نوٹ: پوسٹ میں   کہی  گئی باتوں سے اتفاق /اختلاف  کرنا  آپ کا  حق  ہے ۔۔
اب  مُجھے  اجازت  دیں۔
{ہمیشہ  رب  کی  مہربانیاں  رہیں

Wednesday, May 11, 2016

کُچھ " تصورِخُدا " کے بارے میں۔

منجانب  فکرستان
 مقتول  بنگلہ دیشی  پروفیسر  رضاالکریم صدیق   کی بیٹی نے  بی بی سی کو بتایا کہ ان کے والد خدا انکاری نہ تھے، وہ خُدا پر یقین رکھتے تھے ۔
یقیناً رکھتے ہوں گے اسلئے کہ انسانی ذہن  کیلئے  یہ بات مشکل ہے  کہ وہ  خُدا  اِنکاری ہو ۔۔۔تاہم گوتم بدھ نے بغیر خُدا  فلسفہ/مذہب  متعارف کرایا،  لیکن  گوتم کے مرنے  پر  پیروکارں نے اُسے ہی  دیوتا بنادیا۔۔۔کیوں کہ  یہ انسانی ذہن کی مجبوری  ہے۔
بعض  اشخاص  اپنے حاصل مطالعے کی بنیاد پر اپنا  تصورخُدا تشکیل  دے لیتے ہیں اور اپنے  تئیں سمجھ بیٹھتے ہیں کہ ہم نے ایک اعلیٰ فہم تصورخُدا  تشکیل دے لیا ہے، لیکن  ذرا سا غور کرنے پر اسِ  تصور خُدا  میں  سےبھی وہی مذہبی خُدا والی  صفات  صاف نظر آنے  لگتیں  ہیں۔۔۔
 اِس لئے کہ  کائنات میں  بغیر  صفت کسی  چیز کا تصورممکن نہیں تو تصورخُدا بغیر صفت خُدا کیسے ممکن ہوسکتا ہے 
سائنسدان  بھی خُدا انکاری نہیں ہوتے البتہ  اپنے  سائینسی ماحول اور سائینسی  فکر کے زِیراثر  کائنات میں  موجود مادہ/تونائی  کے  قوانینِ  ربط  کی  بنیاد  پر اپنے  تصور خُدا   میں کوئی  گریٹ  ڈزائنر تک پہنچا ، تو کوئی  کائناتی ذِہن تک پہنچ سکا  ۔۔۔۔
   صوفی کا  تصورِ خُدا  وحدۃالوجود   ہو یا کہ وحدۃالشہود ، اس تصورِ  خُدا میں خُدا کی  تمام  صفات  ضم ہوجاتیں ہیں،اب جو  کچھ  بھی ہے  اللہ  ہی اللہ ہے   یا  جو بھی  نظر  آرہا ہے  سب  اللہ   ہی  ہے  اِس کے  سوا  کُچھ بھی  نہیں ۔۔۔۔مادہ  ہو کہ  توانائی  سب  اللہ  ہی  اللہ ہے  ذرے  میں  دیکھو یا کہ  لہر  میں  اللہ ہی کو دیکھو گے۔۔۔   
   نوٹ: پوسٹ میں   کہی  گئی باتوں سے اتفاق /اختلاف  کرنا  آپ کا  حق  ہے ۔۔
اب  مُجھے  اجازت  دیں۔
{ہمیشہ  رب  کی  مہربانیاں  رہیں

Tuesday, March 22, 2016

دوستی کا اثر ؟؟۔۔

 منجانب فکرستان : برائے غوروفکر کیلئے  
 فلمی نغمہ : "اِک  لڑکی  کو دیکھا تو  ایسا  لگا " مارکیٹ میں آیا تو ایسا لگا جیسے شاعر نے رُومانس کی ماؤنٹ ایورسٹ  چوٹی  سرکرلی ہو ۔۔۔
جاوید اخترکی وجہ  شُہرت  رومانس  بھری  شاعری  ،تاہم  شبانہ  اعظمی  نے  اپنے  حالیہ  انٹرویو  میں کہا ہے  کہ اُنہیں  ایسا محسوس ہوتا  ہے، جیسے  جاوید میں تو  رومانس کی  ہڈی ہی  نہیں ہے۔۔۔۔اِسی طرح ریحام خاننے بھی  برطانوی جریدے  کو دئیے   اپنے انٹرویو  میں کہا  تھا   کہ عمران خان بالکل بھی رومانٹک نہیں ہیں ۔۔  عمران  خان  کے  حوالے  سے مان  لیتے  ہیں  کہ  پارٹی  کے معاملات  کی وجہ  سے  رومانٹک موڈ نہ بن پاتا ہو۔۔۔۔ البتہ جاوید اختر یعنی رُومانی  شاعر کے بارے انکی اہلیہ کا تبصرہ سوچنے والوں کو غوروفکر کی دعوت فراہم کرتا ہے  کہ  کہیں یہ  ساحر  کی دوستی کا  ذہن پر  پڑنے والا اثر تو نہیں ؟؟؟ جس نے کہا  تھا کہ۔۔
زندگی صرف مُحبت نہیں کچھ اور بھی ہے
زُلف و رُخسار کی جنت نہیں کچھ اور بھی ہے 
بھوک اور پیاس کی ماری ہوئی اس دُنیا میں 
عشق ہی ایک حقیقت نہیں کچھ اور بھی ہے
----------------------------------------------------------------------------------------------------

نوٹ:پوسٹ میں کہی گئی باتوں سے اختلاف / اتفاق کرنا آپ کا حق ہے
اب  مُجھے  اجازت دیں :  ہمیشہ رب کی  مہربانیاں  رہیں

Thursday, February 18, 2016

فکرستان کی شئیرنگ (برائے) غوروفکر کیلئے

فکرستان  کی  شئیرنگ  (برائے) غوروفکر کیلئے 

Thursday, January 21, 2016

پیاری بیٹی فاطمہؓ ۔

فکرستان  کی  شئیرنگ بعنوان  " میں  نے پڑھا "  
ـــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
سورة الحج :آیت 17
  جو لوگ ایمان لائے، اور جو یہودی ہوئے، اور صابئی، اور نصاریٰ، اور مجوس، اور جن لوگوں نے شرک کیا، ان سب کے درمیان اللہ قیامت کے روز فیصلہ کر دے گا، ہر چیز اللہ کی نظر میں ہے۔۔
سورة البقرة:آیت 62
  یقین جانو کہ نبی عربی کو ماننے والے ہوں یا یہودی، عیسائی ہوں یا صابی، جو بھی اللہ اور روزِ آخر پر ایمان لائے گا اور نیک عمل کرے گا، اُس کا اجر اس کے رب کے پاس ہے اور اس کے لیے کسی خوف اور رنج کا موقع نہیں ہے ۔۔
سورة الشعراء  آیت  214
اپنے قریب ترین رشتہ داروں کو ڈراؤ ۔سید ابوالاعلیٰ  مودودی
ـــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
سورة الشعراء کی یہ  آیت  نازل ہونے پر آپ  ﷺ  نے اپنی پیاری بیٹی  فاطمہؓ  سے فرمایا: اے میری پیاری بچی  فاطمہؓ تم بھی اپنے  تئیں دوزخ کی آگ  سے بچالو کیونکہ میں تمھارے لیے اللہ  کی طرف سے کسی چیز کا مُختار نہیں ہوں،بہ جز اسکے کہ میری تم سے قرابت داری ہے  ،سو میں اسکا حق ادا کرتا رہوں گا ،البتہ میرے مال میں سے جتنا چاہو مانگ لو۔۔ (  کوہِ صفا کا خطبہ سے اقتباس)۔

نام کتاب: خطباتِ رسول ﷺ ۔۔مرتب: محمد رفیع الدین ہاشمی ۔۔ناشر: منشورات
                    {ہمیشہ  رب  کی  مہربانیاں  رہیں

Tuesday, January 19, 2016

غوروفکرکیلئے ۔۔۔

فکرستان  کی  شئیرنگ بعنوان  " میں  نے پڑھا "  
ـــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
کیا میں آدم اور حوّا کو شجر چھوتا دیکھوں گا؟ کیا میں انہیں زمین پہ اترتا دیکھوں گا؟ کیا میں اوّلین انسان کو زمین پہ بستا دیکھوں گا؟ کیا اس ز مین پر میں اسے آگ دریافت کرتا دیکھوں گا؟ کیا میں پہلے پہیے کو گھومتا دیکھوں گا؟ کیا میں برف بنی زمین دیکھوں گا؟ کیا میں آسمان سے برستے پتھروں اور مخلوقات کو ناپید ہوتا دیکھوں گا؟ کیا میں انسانی کاسۂ سر میں عقل کا نزول دیکھوں گا؟ کیا میں کہکشائوں کو کہکشائوں میں ملتا دیکھوں گا؟ کیا میں ایک پوری کہکشاں کو اس کے مرکزی بلیک ہول کے گرد ناچتا دیکھوں گا؟میرے سر میں جو شے تو نے نازل کی ہے ، تجسس کی رہنمائی میں وہ عقل حقیقت سے آشنا ئی چاہتی ہے ۔ کیا تو دے گا، میرے مالک؟
میں مجبور ہوں ، معذرت خواہ ہوں کہ تجھے فقط مادے اور توانائی کا رب کہہ کر مخاطب کر رہا ہوں ۔۔
- See more at: http://www.dunya.com.pk/index.php/author/bilal-ur-rashid/2016-01-19/14073/11434343#tab2 
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
ہمارے پاس اب جینے کے تین راستے ہیں: ما ل مویشی کی طرح رہنا سیکھیں، طاقت اور دھوکے سے اپنے حقوق چھینیں یا پھر خاموشی سے یہ ملک چھوڑ جائیں۔ میں (کے پی کی) نئی نسل کے بہت سے نمائندوں سے ملا۔ وہ پنجاب مرکزیت پر مبنی جمہوریت کے اس ماڈل پر اپنا اعتبار مکمل طور پر کھو چکے۔۔۔
 - See more at: http://www.dunya.com.pk/index.php/author/khursheed-nadeem/2016-01-18/14056/99069797#tab2
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
 نوٹ:  کہی  گئی باتوں سے اتفاق /اختلاف  کرنا  آپ کا  حق  ہے ۔۔
اب  مُجھے  اجازت  دیں۔
{ہمیشہ  رب  کی  مہربانیاں  رہیں}  

Thursday, January 14, 2016

چاہت میں کیا دنیا داری، عشق میں کیسی مجبوری ؟۔

 فکرستان کی:ہلکی  پُھلکی پوسٹ
یہ دنیا مقابلوں کی دنیا  ہے ۔۔ سب سے زیادہ دولت مند کون؟ ملکہ  حُسن کون؟  سب سے زیادہ لمبا کون،چھوٹا کون موٹا کون ؟ وغیرہ ۔۔۔لیکن کوئی ایسی کمیٹی نہیں بنی کہ جو یہ بتائے کہ دُنیا کا  سب سے بڑا  عاشق کون ؟
 وہ  جو قیس سے مجنوں بن گیا یا  پھر وہ  جو مچھلی کا شکار نہ ملنے  پر   سوہنی  کو اپنی ران کا گوشت کاٹ کر  پیش کر دیا ( مہیوال   قصاب نہیں  تھا ) ،یا  جس نے اپنی شیریں کیلئے  میٹھے  دودھ کی نہر کھود ڈالی  (فرہاد گوالہ نہ  تھا) رانجھا بھی  بِھکاری نہیں تھا، اُس بیچارے  کو بھی   ہیر کی خاطر  بھکاری بننا پڑا تھا ۔۔۔
 اِس مُقابلے کی دُنیا میں ہمارے  عاشق نے عاشقی کی  ایسی داستان  رقم  کی ہے  جسکا  مُقابلہ کوئی عاشق نہیں کر سکتا ۔۔۔ ثابت کردیا کہ ۔۔۔
 چاہت میں کیا دنیا داری، عشق میں کیسی مجبوری  ؟۔
ـــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
عشق کی  یہ  انوکھی داستان"  ٹائمز آف انڈیا "کے  درج ذیل  لنک پر  ہے ۔۔ 

 اس  پوسٹ کہی  باتوں سے اِختلاف / اِتفاق کرنا آپ کا حق ہے ۔ 
مُجھے  اجازت دیں۔۔  خالق  کی مہربانیاں  رہیں