Image result for monument valley
ہر چیز سے عیاں ہے،ہرشے میں نہاں ہے،خالِق کائنات، مالِک کائنات
عقلِ کُل،توانائی کُل، ہمہ جہت، ہمہ صِفت،خالِق کائنات، مالِک کائنات
آنکھیں کہ جِن سے میں دیکھا ہوں میری نہیں، عطائے خُداوندی ہے
  پاؤں کہ جِن سے میں چل تا ہوں میرے نہیں،عطائے خُدا وندی ہے
غرض یہ کہ میرے  وجود کا ذرہ  ذرہ   میرا  نہیں ،عطائے خُداوندی ہے
میرے خالِق میرے مالکِ میرے پروردگارانِ نعمتوں کا بے انتہا شُکریہ  


Sunday, October 10, 2010

جمعے کے خطبے

فکرستان چینل سے میں ہوں آپکا ساتھی آپکا دوست ،ایم-ڈی؛ اس چینل کے زریعے آپکی ملاقات مختلف لوگوں سےہُوا کرے گی۔۔

اب میں آپکی ملاقات ایک دانشور سے کرا رہا ہوں ؛ السلام علیکم ۔۔۔واعلیکم السلام جناب سب سےپہلے آپ ہمیں
یہ بتائیں کہ ملک میں مذہبی جگہوں پر خود کش حملوں کی کیا وجہ
دیکھئے اس میں کئی فیکٹر شامل ہیں مثلا"فرقہ واریت کی انتہا پسندی
،ایجنسیاں ، دُشمنیاں وغیرہ ، لیکن اسکا سب سے زیادہ نقصان اسلام کو ہو رہا ہے ۔۔۔ اچھا جناب جو فیکٹر آپنے گنوا ئے ہیں انکی

وضاحت فر مائیں گے ۔۔۔اصل فیکٹر تو فرقہ واریت کی انتہا پسندی ہے باقی اس کی آڑ میں پاکستان دشمن ملکوں کی ایجنسیاں اپنے

مقاصد حاصل کر رہی ہیں ۔۔۔ پاکستان میں قائم مدرسوں کے بارے میں آپ کی کیا رائے ہے ؟ مذہبی تعلیم کے

ان مسلکیمدرسوں میں اپنے اپنے مسلک کی حقانیت کو اُجاگر کرنے کے لئے جو انداز اپنایا جاتا ہے وہُ ایسا ہوتا ہے

کہدوسرے مسلک والوں پر زد پڑے ،مدرسوں کی تعلیم سے فارغ ہوکر جب یہ اپنے مسلکی مسجد میں امامت کرنے

لگتے ہیں تو گویا اُنہیں ایک سلطنت مل جاتی ہے ، عزت و احترام ملنے پر انکے دماغ ساتویں آسمان پر پہنچ جاتے ہیں،

اب وہ اعلیٰ بن جاتے ہیں ، اور کیوں نہ ہوں آپ تو ڈاکٹر ہیں ، انجینئر ہیں ،پروفیسر ہیں لیکن دینی تعلیم آپکے پاس

نہیں ہے اسی لئے وہ ، جمعہ کے خطبوں میں جوش خطابت میں ایسی باتیں بھی کہہ جاتے ہیں جو نہ صرف عقل وخرد

کے خلاف ہوتی ہیں بلکہ اسلام کیلئے بھی سخت نقصان دہ ہوتیں ہیں اورفرقہ واریت کو بھی ہوا دیتی ہیں یہ اپنی بات

میں زور پیدا کرنے کیلئے اُسکوحدیث سے بھی منسلک کردیتے ہیں ، یہ ہی وجہ ہے کہ لا تعداد حدیثیں جمع ہوگئیں

ہیں یہ ضعیف،غریب ،متروک ، موضوع،مبہم حدیث کی قسمیں کہاں سے آگئیں ، ان زبانی خطبوں نے اسلام کو

بہت نقصان پہُنچا یا ہے۔۔۔ اچھا جناب اب آپ ہمیں یہ بتائیں کہ مدرسوں سے فارغ جو مسجدوں میں نہیں جا

پاتے ہیں ،وہ کیا کرتے ہیں ؟ وہ ان مسلکوں کے محافظ یعنی یوتھ ونگ بن جاتے ہیں ، دیکھیں یوتھ میں فطری طور

پر کچھ کر گزرنے کا جذبہ ہوتا ہے ،آپ نے اسپورٹ چینل میں اس جذبہ کی جھلک دیکھی ہوگی کہ وہ کسطرح سے

موٹر سائیکل کو ہوا میں اُڑاتے ہیں کہ موت کی اُنہیں پروہ نہیں ہو تی ہے ، ہمارے یہاں یوتھ کے اسی جذبہ کو

اپنے مقاصد کیلئے مذہبی جماعتیں بھی استعمال کر تی ہیں اور سیاسی جماعتیں بھی جبکہ ترقی یافتہ ممالک یوتھ کے اسی

جذبہ کو مختلف کھیلوں کے مقابلوں ،مختلف فنون کے مقابلوں اور تعلیمی مقابلوں کے زریعہ صحت مند راستہ فراہام

کرتے ہیں، یقین کریں پاکستان میں یوتھ کی اس بربادی کو دیکھ کر بہت دُکھ ہوتا ہے ۔۔۔اب آپ کے نزدیک اس

کا حل کیا ہے ؟میرے نزدیک اسکا بہترین حل یہ ہے کہ مسلم اُمہ حضورﷺ کے آخری خطبہ پر عمل پیرا ہوں

حضورﷺنے خطبہ میں کس قدر حکیمانہ الفاظ میں مسلمانوں کو تلقین کی ہے کہ انتہا پسندی سے بچو ، میرے بعد

فرقوں میں نہ بٹ جانا کہ تم سے پہلی قومیں فرقوں میں بٹ کر تباہ ہو گئیں ، فرقہ پرست علماؤں نے جان بوجھ کر

حضور ﷺ کے خطبہ کو پس پشت ڈال دیا ہے کہ اُس میں فرقہ پرستوں کے لئے کوئی گنجائش نہیں ہے ،یہ تو میں

نے موقع کی مناسبت صرف ایک شق کی بات کی ہے جبکہ پورا خطبہ پوری انسانیت کے لئے مشعل راہ ہے، اقوام

متحدہ کے انسانی حقوق کے چارٹر میں اسی خطبہ کی جھلک نظر آتی ہے ،میرے خیال میں آج تک دنیا میں کسی

انسان نےانسانیت کی فلاح کیلئے اتنے اچھے نکات نہیں پیش کئے ہیں جو کہ اس خطبہ میں موجود ہیں میرے خیال

میں اس خطبہ کو اتنا زیادہ ہائی لائٹ کیا جانا چاہئیےکہ یہ مسلمانوں کی عملی زندگی میں شامل ہوجائے - انہیں پر عمل

پیرا ہو کر انسانیت فلاح پاسکتی ہے ، جوکہ خالق کائنات کامقصد ہے،تمام فرقہ پرست علماؤں کو چاہیئے کہ اُمہ پر رحم

فرمائیں اپنی انا کی غلامی اور اپنی اپنی شناختوں کو نکال کر دور پھینکیں سر جوڑ کر بیٹھیں حضور ﷺ کے خطبہ کی

روشنی میں ایک راہ عمل بنائیں اور اُس پر عمل پیرا ہوں ،آخری بات یہ ہے کہ مسلم اُمہ کو چاہیئے کہ جمعوں کے

خطبوں میں حضور ﷺ کے آخری خطبہ کے تمام نکات علاقائی زبان میں پڑھنا ضروری قرار دیں ، یہی جمعہ کا

خطبہ ہونا چاہئے-بہت شُکریہ کہ آپنے ہمارے لئے وقت نکالا؛آپ کا بھی شُکریہ کہ مجھےبولنے موقع دیا-بہت شکریہ

2 comments:

  1. جزاک اللہ خیر۔ اللہ تعالی ہم کودین اسلام کوصحیح طورپرسمجھنےکاہمت وحوصلہ دے۔ آمین ثم آمین

    ReplyDelete
  2. محترم جاوید اقبال صاحب -تبصرہ کرنے پر شکریہ قبول فرمائیں -بہت شکریہ

    ReplyDelete